شکریہ پاکستان


نہیں نہ امید اقبال اپنی کشتِ ویراں سے
ذرا نم ہو تو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے ساقی


اقبال نے کہا اور کیا خوب کہا, ہزاروں مسلمانوں کی بے پناہ قربانیوں, ان کے لحو کی خوشبو سے رچی ہے یہ مٹی۔ ذرا نم کرو تو یہ دھرتی ان قربانیوں کا صلہ دینے لگتی ہے۔ مگر اب اس دھرتی نے بھی ہار مان لی ہے۔ مسلسل صلہ دیتے دیتے وہ ہمت ہار چکی ہے. سالوں سے بوئے ہوئے بیج کا پھل کب تک کاٹو گے۔ ذرا سوچو پیدائش سے لے کر اب تک اپنی اس سنہری دھرتی کو دیا کیا ہے؟ اپنی محنت سے اپنے لحو سے کبھی اس مٹی کو ذرخیز کیا ہے؟ تمھارے اگلے آنے والے سوال سے بھی باخوبی واقف ہوں۔ کہ جتنا لحو اب برس رہا ہے اس کا مقابلہ بھلا آزادی کی قربانی سے کیوں کر کریں۔ مگر میرے دل میں تو بس ایک ہی بات بسی ہےکہ کہاں وہ حق پرستوں کی اپنی آزادی ِ فکر کی جنگ اور کہاں آج کے حکمرانوں کی اپنی مضبوطی ِ اقتدار کے لئے جنگ۔ ذرا غور کر اے نوجواں, تو بڑا واضح فرق رکھا ہے دونوں میں. تو سارا دن بیٹھ کر اس سوچ میں لمحے گزار دیتا ہے کہ کاش کچھ ایسا ہو جائے پاکستان راتوں رات امریکہ بن جائے۔ کبھی اس بات پر بھی غور کر لیا کر کہ امریکیوں کو امریکہ بنانے کے لیے کتنی محنت اور بھاری سرمایکاری کرنی پڑھتی ہے۔ مگر تم کیا جانوتم تو پیدائش سے ہی سونے کے چمچے سے سونے کا نوالہ لینے والوں میں سے ہو. جس پنچھی نے کبھی قید دیکھی ہی نہ ہو اس کو کیا علم آزادی کس جام کا نام ہے۔ پوچھنا ہی ہے تو کسی کشمیری سے پوچھو آزادی کس گل کا نام ہے۔ کسی فلسطینی سے پوچھو آزادی سورج کی کس کرن کو کہتے ہیں۔ تم تو بس اس ٣٠ انچ کے ڈبےکو صبح شام تکتے رهتے ہو, جو اس پر سے سن لیا وہی حقیقت ہے، جو کچھ دیکھا وہ سب سے بڑا سچ ہے. نہ خود کسی چیز کو جاننے کی کوشش کی اور نہ سمجھنے کی، اور نہ ہی آگے کوئی ارادہ مطلوب لگتا ہے

موجودہ دور ِ حکومت کے نقص گنوانے ہوں تو صف میں سب سے آگے آپکو پایا جاتا ہے. بھلے مانس اگر جعلی ڈگری کے مرتکب ہیں تو کیا ہوا، رشوت لیتے ہیں تو کونسی بڑی بات ہے، اقربا پروری کے حامی ہیں تو کونسا بڑا گناہ کر دیا. ووٹ ڈال کر جس گناہ کا ارتکاب آپنے کیا ہے اور جو بیج آپنے بویا ہے، اس کا پھل تو اب کاٹنا ہی پڑے گا

میری تو اپنے آپ سے, سب سے, بس یہی التجاہ ہے کہ محنت نہیں کرسکتے نہ کرو، مدد نہیں کرسکتے نہ کرو، اس مٹی کو اپنے پسینے سے نم نہیں کرسکتے, نہ کرو مگر اے اس وطن کے باسیوں صرف ایک بار دل سے اس ملک کو اپنا تو مانو. چھوڑو باہر کے ملکوں کو وہاں کیا رکھا ہے، وہاں اُس دیس میں ایسی خوشبو کہاں. ایسی زرخیزی کہاں، ایسی الفت کہاں، ایسی چاہت کہاں- زندگی بھر لگا دو گے باہر, مگر پلٹ کر آنا تو اپنے لئے منوں مٹی ڈھونڈنے یہیں ہینا، تب کس منہ سے اسکو اپنا کہوگے، کس حق سے اسے اسکا فرض یاد دلاؤ گے

کچھ نہ کر سکو تو اک بار اسکو یہی که دو, اے میری دھرتی میری وارث تجھے میرا سلام
شکریہ پاکستان
Advertisements

10 thoughts on “شکریہ پاکستان

  1. yesterdaywazbetter says:

    very well written…

    this is exactly what we have to realize we Pakistanis have so far only learned to criticize on anything and everything while we are doing literally nothing to bring a positive change in Pakistan….

    Long Live Pakistan

  2. Sana says:

    @Attiya: We have to Unite to show a BIGGER Picture of our country, we are affected with these natural disasters, we are threatened by terrorists and by recession, but we still CAN make it back to the Top InshAllah 🙂

    @Maj: LOLX! yes we have to be more sympathetic towards or Own language, just like everything else it needs us the most 🙂

    @Uni: who else do u think would come up with that 😛

  3. Mobeen says:

    Aur haqeeqat yeah hay kay ager hum watan-e-pak ku kuch day nahi saktay tu laynay ka ikhtiyar kun ker rakhain … ager muhib-e-watni kay ehsas nay hamaray wajud main dam tour dia hay tu kam’az kam iss wajud ko araz-pak main nafrat aur adawat pehlanay ka zarya na banaay dain… Gar yeah ker saku tu yahi samjho kay yeahi tumhari watan kay liya qurbani hay.

  4. Muhammad Wasif Javed says:

    Masha'ALLAH … Bohat khoob likha hai … remind me of an angel kiddie who once asked me in her sweet voice that Uncle, how many times have you said “Shukariya Pakistan” ??? and left me with no answer :-S
    Sitting thousands miles away from my Land now trying to contribute something while keeping in mind whatever am I now it is all because of it.
    Long Live Pakistan!!!
    http://the-cause-blog.blogspot.com/2010/08/make-14th-august-day-of-revival.html – My Post on Same Topic
    http://the-cause-blog.blogspot.com/ – Our Blog

  5. Sana says:

    @Mobeen and @Muhammad Wasif Javed: Thanks for stopping by and taking out time to read and comment on the post. I really appreciate your voice on it as well 🙂

    @Mahmud: Im glad you were able to read it, btw can you really read Urdu as well?

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s